ماضی کی کچھ یادیں اور کچھ باتیں۔

جس وقت میں یہ مقالہ لکھ رہا تھا، تو میری کیفیت یہ تھی کہ میں مسلسل رو رہا تھا۔ کافی کوشش کرنے کے باوجود میں اپںے اوپر کنٹرول نہیں کر پارہا تھا۔ اللہ تعالی میری اس بات کو پڑہنے والوں کی دلوں اتار دے۔ تاکہ وہ اپنے والدین اور دادا اور دادی، اسکے علاوہ قریبی رشتداروں کے ساتھ حس سلوک والا معاملہ فرمائیں، اور انکی قدر کریں۔ آمین

ایک عظیم اصول اور ہمارا طرز عمل

[مولانا ڈاکٹر محمد اسجد قاسمی ندوی مہتمم وشیخ الحدیث جامعہ عربیہ امدادیہ مراد آباد ،انڈیاوخلیفہ مجاز الشاہ حکیم محمد اختررحمہ اللہ،جید عالم دین،چالیس کتابوں کے مصنف ہیں۔ النخیل کے لیے لکھا گیا یہ مضمون پیشِ خدمت ہے۔ ان کی تحریریں النخیل کی زینت بنتی رہیں گی،ان شاءاللہ۔ ادارہ]
ماہنامہ النخیل شوال 1440
  • مضامین کے اعداد شمار:
  • کل مضامین : 376
  • مشاہدات : 214888

کیا آپ لکھاری ہیں؟

اپنی مفید ومثبت تحریریں ہمیں ارسال کیجئے

یہاں سے ارسال کیجئے

ویب سائٹ کا مضمون نگار کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں، اس سائٹ کے مضامین تجارتی مقاصد کے لئے نقل کرنا یا چھاپنا ممنوع ہے، البتہ غیر تجارتی مقاصد کے لیئے ویب سائٹ کا حوالہ دے کر نشر کرنے کی اجازت ہے.
ویب سائٹ میں شامل مواد کے حقوق Creative Commons license CC-BY-NC کے تحت محفوظ ہیں
شبکۃ المدارس الاسلامیۃ 2010 - 2020